128-The jewel of seven stars by Bram Stoker

The jewel of seven stars by Bram Stoker

زندہ ممی از مقبول جہانگیر

The jewel of seven stars by Bram Stokerمصنف: بریم اسٹوکر

ترجمہ: زندہ ممی

مترجم: مقبول جہانگیر

صنف: ناول، خوفناک ناول، انگریزی ادب

صفحات: 213

سن اشاعت: 1903

خوفناک کہانیوں کی جب بات کی جائے تو “ڈریکولا” سے سب ہی واقف ہوں گے۔ یہ ناول انگریزی ادب میں کلاسک کا درجہ رکھتا ہے۔ یہ مشہور ناول اور کردار آئرش مصنف “بریم اسٹوکر” کا تخلیق کردہ ہے۔ ڈریکولا کے علاوہ بھی اسٹوکر کے کریڈٹ پہ کئی ناول اور مختصر کہانیاں ہیں جن میں سے ایک پہ آج بات ہو رہی ہے۔ اس ناول کا عنوان ہے “دی جیول آف سیون اسٹارز” یعنی سات ستاروں کا زیور۔ اس ناول کا اردو زبان میں ترجمہ مقبول جہانگیر صاحب کی مہربانی سے ہم تک پہنچا ہے۔ اس ترجمے کا مطالعہ آج سے کوئی پندرہ سولہ سال قبل کیا گیا تھا، کتابستان کے لئے مضمون لکھتے ہوئے اسے دوبارہ پڑھنے کا موقع ملا اور اتنے طویل عرصے کے بعد پڑھنے کے بعد بھی اس ناول نے اتنا ہی لطف دیا جتنا کہ پہلی بار مطالعہ کے دوران محسوس ہوا تھا۔ یہ یقیناً مصنف کی مہارت اور موضوع کی دلچسپی ہے کہ یہ ناول کسی بھی زمانے میں پرانا محسوس نہی ہوتا وہیں یہ مترجم کی بھی کامیابی ہے کہ اس نے اردو زبان کے قالب ڈھالتے ہوئے ناول کی دلچسپی کم نہیں ہونے دی۔ Continue reading 128-The jewel of seven stars by Bram Stoker

125-Regency Buck by Georgette Heyer

Regency Buck by Georgette Heyer

Regency Buck by Georgette Heyer

مصنفہ: جیورجٹ ہئر

صنف: ناول، انگریزی ادب

صفحات: 333

سن اشاعت: 1935

ISBN: 0-09-944685-5

انگریز مصنفہ جیورجٹ ہئر کا کتابستان میں ہم پہلے بھی تذکرہ کر چکے ہیں۔ آپ گزشتہ صدی کی مشہور مصنفہ ہیں جو اپنے ناولوں کی وجہ سے مشہور ہوئیں۔ آپ کے ناولوں میں عموماً سو سال قبل کے انگلستان کی عکاسی کی گئی ہے۔ ایک صدی قبل کے انگلستان کے حالات، رسوم و رواج، فیشن اور طور طریقوں کی عمدہ منظر کشی آپ کے ناولوں میں ملتی ہے۔ ان ناولوں کی رومانوی فضا، دلچسپ کہانی اور ایک صدی پرانی تفصیلات ان ناولوں کو وہ مخصوص پہچان دیتے ہیں  جو جورجئیٹ ہئر صاحبہ سے منسوب ہے۔ آج جس ناول پہ بات ہو رہی ہے وہ بھی ان تمام خصوصیات کا حامل ہے۔ Continue reading 125-Regency Buck by Georgette Heyer

116- امر بیل از عمیرا احمد

امر بیل از عمیرا احمد

Amar bail- Umaira Ahmedمصنفہ: عمیرا احمد

صنف: ناول، پاکستانی ادب

صفحات: 760

امر بیل، عمیرا احمد صاحبہ کے قلم سے نکلا ہوا ایک شاہکار ناول ہے۔ یہ ایک رومانوی ناول ہے جس کے تانے بانے پاکستان کی سول سوسائٹی کی زندگی اور اطوار کے گرد بنے گئے ہیں۔ عمیرا صاحبہ کے زیادہ تر ناولوں کا موضوع مذہب یا عورت ذات رہی ہے تاہم امر بیل عمیرا احمد کے ان چند ناولوں میں ہے جس کا مرکزی خیال مذہب سے نہیں اٹھایا گیا۔ یہ ناول کئی ماہ تک ڈائجسٹ میں شائع ہوتا رہا ہے اور اس نے بہت مقبولیت حاصل کی۔ بعد ازاں اس کو کتابی شکل میں بھی پیش کر دیا گیا ہے۔ اس ناول پہ مبنی ڈرامہ بھی ٹیلی ویژن پہ آ چکا ہے۔ Continue reading 116- امر بیل از عمیرا احمد

112-میرے ہمدم میرے دوست از فرحت اشتیاق

میرے ہمدم میرے دوست از فرحت اشتیاق

Merey hamdam merey dostمصنفہ: فرحت اشتیاق

صنف: ناول، پاکستانی ادب

میرے ہمدم میرے دوست، محترمہ فرحت اشتیاق صاحبہ کی تخلیق ہے۔ فرحت اشتیاق وہی مصنفہ ہیں جن کے لکھے ہوئے ناول ہم سفر پہ مبنی ڈرامے نے ناصرف ملک گیر شہرت حاصل کی بلکہ ہمسایہ ملک میں بھی اپنی پسندیدگی کے جھنڈے گاڑنے میں کامیاب ہوا۔ میرے ہمدم میرے دوست کی بھی ڈرامائی تشکیل کی گئی ہے اور اس کو بھی ڈرامے کی شکل میں حال ہی میں پیش کیا گیا ہے۔ فرحت اشتیاق صاحبہ خواتین کے لئے شائع ہونے والے ڈائجسٹس کی مشہور لکھاری ہیں۔ آپ ہلکے پھلکے رومانوی موضوعات پہ لکھتی ہیں۔ آپ کے ناولوں کا مرکزی کردار ناول کی ہیروئن ہوتی ہے اور ناولوں میں اس کی زندگی اور اس میں آنے والی تبدیلیاں اور حالات پیش کئے جاتے ہیں۔ زیادہ تر آپ کی ہیروئن ایک تعلیم یافتہ، خوددار اور باہمت لڑکی ہوتی ہے جو زندگی میں مشکلات پیش آنے پہ آنسو بہانے کے ساتھ ساتھ ہمت کا مظاہرہ کرتی ہے اور اپنے حالات کی بہتری کے لئے کوشش کرتی ہے۔ تاہم کہانی میں ایک زبردست سا ہیرو بھی ہمیشہ موجود ہوتا ہے۔ Continue reading 112-میرے ہمدم میرے دوست از فرحت اشتیاق

108- جو چلے تو جان سے گزر گئے از ماہا ملک

جو چلے تو جان سے گزر گئے از ماہا ملک

Jo chaley tou jaan sey guzer gayeمصنفہ : ماہا ملک

صنف: ناول، پاکستانی ادب

صفحات: ۱۶۳

ماہا ملک صاحبہ خواتین کے لئے چھپنے والے ڈائجسٹس کی ممتاز مصنفہ ہیں۔ آپ کے قلم سے کئی ناول نکل چکے ہیں اور ملک گیر شہرت حاصل کر چکے ہیں۔ آپ کے کئی ناولوں پہ ڈرامے بھی بنائے جا چکے ہیں۔’ جو چلے تو جان سے گزر گئے ‘ کی بھی ڈراماٹائزیشن ہو چکی ہے۔ یہ ماہا کے قلم سے نکلا ہوا کافی پرانا ناول ہے جس نےاس وقت مقبولیت کے بےپناہ ریکارڈ قائم کئے ۔ Continue reading 108- جو چلے تو جان سے گزر گئے از ماہا ملک

103- اندھیروں کے قافلے از خان آصف

اندھیروں کے قافلے از خان آصف

Andheron k kafleمصنف: خان آصف

صنف: تاریخی ناول، پاکستانی ادب، اردو ادب

صفحات: 455

قیمت: 600 روپے

ناشر: القریش پبلی کیشنز لاہور

ISBN: 9789696022114

خان آصف اسلامی تاریخ کے دریچوں سے کہانیاں نکال کے لانے کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں۔ آپ کے قلم سے کئی تاریخی ناول نکل چکے ہیں۔ آپ نے مسلمان اولیاء اور بزرگوں کی زندگی کے واقعات بھی دلچسپ کہانیوں کی صورت میں پیش کئے ہیں۔ آپ کی یہ تحاریر ہفت روزہ اخبار جہاں میں بڑی باقاعدگی سے چھپتی رہی ہیں جن میں سے اکثریت نے نا صرف بےپناہ مقبولیت حاصل کی بلکہ یہ دلوں میں ایمان کی گرمی جگانے کا باعث بھی بن گئیں۔ خان آصف صاحب کی مقبول کتب میں اللہ کے ولی، اللہ کے سفیر، دلوں کے مسیحا، سفیرانِ حرم، وغیرہ شامل ہیں۔ Continue reading 103- اندھیروں کے قافلے از خان آصف

100- سرخ فیتہ از قدرت اللہ شہاب

سرخ فیتہ از قدرت اللہ شہاب

Surkh Feetaمصنف: قدرت اللہ شہاب

صنف: افسانے، اردو ادب، پاکستانی ادب

صفحات: 239

کتابستان آج اپنے بلاگ پہ 100 ویں کتاب کا تعارف و تبصرہ پیش کرنے جا رہا ہے۔ یہ کتابستان کے سفر میں ایک سنگ میل ہے۔ اس سفر کے دوران ہماری کوشش رہی ہے کہ مختلف النوع کتب کے بارے میں بات کی جائے جو مذہب سے لے کے فکشن، بین الاقوامی ادب اور سائنس و ٹیکنالوجی کے میدانوں کی کتب کا جائزہ پیش کیا گیا ہے۔ آج کے اس موقع پہ ہم آپ کے لئے ایک خاص کتاب پیش کر رہے ہیں جس کا عنوان ہے سرخ فیتہ اور یہ قدرت اللہ شہاب صاحب کی لکھی ہوئی ہے۔ Continue reading 100- سرخ فیتہ از قدرت اللہ شہاب

099-لگن از بشریٰ رحمٰن

لگن از بشریٰ رحمٰن

Lagan- Bushra Rehmanمصنفہ: بشریٰ رحمان

صفحات: 546

قیمت: 550 روپے

صنف: ناول؛ پاکستانی ادب

ناشر: خزینہء علم و ادب، لاہور

بشریٰ رحمٰن صاحبہ کے بارے میں پہلے بھی بات ہو چکی ہے۔ آپ ایک جانی مانی مصنفہ ہیں جن کے قلم سے کئی مشہور ناول اور افسانے نکل چکے ہیں۔ کتابستان میں آج جس کتاب کے بارے میں ہم بات کر رہے ہیں وہ آپ کا لکھا ہوا ایک مشہور ناول ہے جس کا عنوان ہے “لگن”۔ یہ وہی ناول ہے جس پہ پاکستان ٹیلی ویژن کے گولڈن زمانے میں ڈرامہ بنایا جا چکا ہے۔ اس دور میں اس ڈرامے نے مقبولیت کے نئے ریکارڈ قائم کئے تھے جس میں ناول کی کہانی کا بڑا ہاتھ تھا۔ Continue reading 099-لگن از بشریٰ رحمٰن

098-من و سلویٰ از عمیرا احمد

من و سلویٰ از عمیرا احمد

manosalwa-titleمصنفہ: عمیرااحمد

صنف: ناول، پاکستانی ادب، اردو ادب

صفحات: 784

پاکستانی خواتین مصنفات کے ناولوں کا مطالعہ کرتے ہوئے موضوعات کی یکسانیت کا احساس ہوتا ہے۔ زیادہ تر کہانیاں کچھ موڑ مڑ کے ایک ہی رخ اور سمت اختیار کر لیتی ہیں۔ ناولوں کے پلاٹ میں نیا پن، کوئی اچھوتی بات کوئی منفرد کردار ڈھونڈنے سے بھی نہیں ملتا۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ایک فکری اور ذہنی جمود ہماری مصنفات کی تخلیقی صلاحیتوں پہ چھا چکا ہے اور دھند کی یہ لہر دبیز سے دبیز تر ہوتی جا رہی ہے۔ ایسے فکری قحط کے دور میں کچھ مصنفات ایسی بھی ہیں جو بارش کے چھینٹے کی طرح ہیں۔ ان کا کام ایک تازہ ہوا کے جھونکے کی طرح ہے جو قاری کے دل اور روح کو جھنجوڑ دیتا ہے۔ اس کے دماغ کی تلاش کو مطمئن کر دیتا ہے۔ ہم گاہے بہ گاہے کتاباستان کے صفحات پہ ایسی خواتین مصنفات کا ذکر کرتے رہے ہیں۔ آج بھی ایک ایسی مصنفہ کی کتاب کا ذکر ہے جن کا نام ہی کافی ہے۔ عمیرا احمد، کتابستان میں سب سے زیادہ بات کی جانے والی مصنفہ ہیں۔ آپ کی کہانی منفرد اور اچھوتے موضوعات پہ مبنی ہیں۔ آپ کی سوچ اور فکر سے قارئین کو اختلاف ہو سکتا ہے تاہم یہ کسی بھی طرح آپ کے کام کی اہمیت کو کم نہیں کرتا۔ آج آپ کے جس ناول پہ بات ہوگی اس کا عنوان ہے “من و سلویٰ”۔ ہماری رائے میں من و سلویٰ عمیرا کا اب تک کا بہترین ناول ہے۔ بہت سے لوگ اس بات سے اختلاف کریں گے کیونکہ آپ کے لکھے ہوئے ناول “پیرِ کامل” کو عمومی پسندیدگی کی سند حاصل ہے اور ایسا ہونا بھی چاہئے، تاہم ایک مصنفہ کے طور پہ عمیرا صاحبہ من و سلویٰ میں اپنے فن کی بلندی پہ نظر آئی ہیں، آپ کی سوچ کا پختہ پن اس کہانی میں جھلک جھلک کے سامنے آیا ہے اور یہی ہماری رائے میں اس ناول کو آپ کے دوسرے ناولوں سے ممتاز کرتا ہے۔ Continue reading 098-من و سلویٰ از عمیرا احمد

094- شہر دل کے دروازے از شازیہ چودھری

شہر دل کے دروازے از شازیہ چودھری

Shaher_e_dil_k_darwazeمصنفہ: شازیہ چودھری

صنف: ناول، اردو ادب، پاکستانی ادب

صفحات: 479

قیمت: 500 روپے

ناشر: مکتبہ عمران ڈائجسٹ، کراچی

کتابستان کا آج کا موضوع شازیہ چودھری صاحبہ کا تحریر کردہ ناول ہے۔ شازیہ چودھری صاحبہ کا بہت کم عمری میں انتقال ہو گیا، ہم ان کی مغفرت کے لئے دعا گو ہیں، یہی وجہ ہے کہ آپ کی زیادہ تحاریر موجود نہیں ہیں۔ شازیہ چودھری صاحبہ نے یہ ناول ایک ڈائجسٹ کے لئے لکھا تھا جس نے بےپناہ مقبولیت حاصل کی تھی، بعد ازاں اس ناول کو کتابی شکل میں بھی پیش کیا گیا ہے، ناول اخباری کاغذ پہ شائع کیا گیا ہے، جس کی وجہ سے اس کی قیمت زیادہ محسوس ہوتی ہے۔ Continue reading 094- شہر دل کے دروازے از شازیہ چودھری