135- ایک دن کی بات از عکسی مفتی

ایک دن کی بات از عکسی مفتی

Aik din ki baat- Aksi Muftiمصنف: عکسی مفتی

صنف: جدید حکایات، اردو ادب، پاکستانی ادب، مضامین

سن اشاعت: 2013

صفحات: 200

قیمت: 500 روپے

ناشر: الفیصل ناشران، اردو بازار لاہور

عکسی مفتی، مشہور مصنف ممتاز مفتی صاحب کے صاحبزادے ہیں۔ تاہم یہ آپ کی پہچان کا واحد حوالہ نہیں۔ ایک مشہور و معروف والد کی اولاد ہونے کے باوجود عکسی صاحب نے اپنی پہچان خود بنائی ہے اور اس کی انفرادیت برقرار رکھی ہے تاہم والد سے لکھنے کے جراثیم آپ کو ضرور منتقل ہوئے ہیں۔ آپ کی ایک اہم پہچان لوک ورثہ سے آپ کی وابستگی ہے آپ لوک ورثہ کے ڈائریکٹر رہ چکے ہیں۔ اسلامی اور پاکستانی ثقافت کو دنیا بھر میں متعارف کروانے کے لئے آپ کا کردار قابل تعریف ہے۔ آپ فلسفے اور نفسیات کے ماہر ہیں۔ اپنے والد کی طرح عکسی مفتی بھی اپنی زمین سے جڑے ہوئے ہیں۔ آپ کی تحریروں میں اسلامی تہذیب و ثقافت کا حوالہ و ذکر بار بار ملتا ہے۔ آپ کے قلم سے “تلاش” جیسی کتاب نکل چکی ہے جس کا موضوع “اللہ: ماورا کا تعین” ہے۔ یہ وہی تلاش ہے جس کا ذکر ممتاز مفتی کی تحریروں میں نظر آتا ہے اور اسی تلاش کا ذکر عکسی مفتی کی تحریروں میں چھلکتا ہے۔ Continue reading 135- ایک دن کی بات از عکسی مفتی

Advertisements

075- مرد ابریشم از بانو قدسیہ

مرد ابریشم از بانو قدسیہ
Mard-e-Abresham

مصنفہ: بانو قدسیہ

صفحات: 157

ناشر: سنگ میل پبلی کیشنز، لاہور

“مرد ابریشم” بانو قدسیہ کے قلم سے نکلی ہوئی ایک نان فکشن تحریر ہے جس کا موضوع “قدرت اللہ شہاب” ہیں۔ قدرت اللہ شہاب صاحب کے تعارف کے بارے میں بتانے کی ہمیں ضرورت نہیں، آپ اپنا تعارف آپ ہیں۔ لیکن اگر کوئی قاری ان سے ناآشنا ہیں تو آپ کی لکھی ہوئی کتاب شہاب نامہ آپ سے واقفیت حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہے۔ اور اگر مزید تعارف چاہئے تو بانو جی کی “مرد ابریشم” کا مطالعہ بھی مددگار ثابت ہوگا۔ Continue reading 075- مرد ابریشم از بانو قدسیہ

034۔ قدم بہ قدم از مسعود الحسن ضیاء

قدم بہ قدم از مسعود الحسن ضیاء

مصنف: مسعود الحسن ضیا

صفحات: 224

قیمت: 250 روپے

ناشر: پورب اکادمی، اسلام آباد

کتابستان کے آج کے بلاگ کا موضوع مسعود الحسن ضیاء کی لکھی ہوئی کتاب قدم بہ قدم ہے۔ مسعود الحسن ضیاء صاحب کی غالباً یہ پہلی کتاب ہے کیونکہ ان کی لکھی ہوئی کسی دوسری کتاب کا باوجود تلاش کے علم نہیں ہو سکا (اپ ڈیٹ: یہ کتاب مسعود الحسن صاحب کی پہلی تصنیف نہیں ہے۔ آپ کی پہلی تصنیف اور دیگر کتب کے بارے میں جاننے کے لئے اس بلاگ کے نیچے ان کا تبصرہ ملاحظہ کریں۔ شکریہ)۔ کتاب کے آغاز میں کئی لوگوں کی کتاب کے بارے میں رائے بھی پیش کی گئی ہے جن میں بانو قدسیہ صاحبہ، پروفیسر ڈاکٹر سلطان الطاف علی، فرحین چوہدری، پروفیسر ڈاکٹر سید شاہد حسن رضوی، اور ڈاکٹر مزمل بھٹی شامل ہیں۔ بانو قدسیہ صاحبہ کے خیالات پڑھ کے اندازہ ہوتا ہے کہ مسعود صاحب بھی اسی مکتب فکر سے تعلق رکھتے ہیں جس سے ممتاز مفتی صاحب رکھتے تھے Continue reading 034۔ قدم بہ قدم از مسعود الحسن ضیاء