142- آخری آدمی از انتظار حسین

آخری آدمی از انتظار حسین

Aakhri aadmi-Intezar Hussainمصنف:انتظار حسین

صنف: افسانے، اردو ادب، پاکستانی ادب

صفحات: 160

قیمت: 200 روپے

ناشر: سنگ میل پبلی کیشنز

ISBN: 969-35-2049-1

انتظار حسین موجودہ دور کے مشہور مصنف ہیں۔ آپ بیک وقت افسانہ نگار، ناول نگار اور کالم نویس ہیں۔ بستی، آگے سمندر ہے، ہندوستان سے آخری خط، شہرِ افسوس آپ کی کچھ تصانیف کے عنوانات ہیں۔ آپ کے ناولوں کا انگریزی زبان میں ترجمہ بھی کیا جا چکا ہے۔ سن 2013 میں آپ کو بکر پرائز کے لئے نامزد بھی کیا گیا تھا۔ یہ آپ کے کام کی اہمیت کا بین الاقوامی سطح پہ اعتراف ہے۔ آپ کو حکومت پاکستان کی طرف سے تمغہ امتیاز سے بھی نوازا جا چکا ہے۔ اردو نثر میں انتظار حسین کا کام ان کے ہم عصروں سے مختلف اور جداگانہ ہے۔ آپ کی تحریروں کا ماحول کسی بچپن کی کہانی یا پرانے قصے جیسا ہے۔ آپ کی زبان پرانے عہد نامے اور داستانوں کی سلیس و سادہ زبان ہے جسے آپ نے اپنے مخصوص اسلوب میں پیش کیا ہے۔ آج کا ہمارا موضوع آپ کے افسانوں کی کتاب ہے جس کا عنوان ہے “آخری آدمی”۔ Continue reading 142- آخری آدمی از انتظار حسین

137-قائم دین از علی اکبر ناطق

قائم دین از علی اکبر ناطق

Qain Deen-Ali Akber Natiqمصنف: علی اکبر ناطق

صنف: افسانے، اردو ادب، پاکستانی ادب

صفحات: 106

قیمت: 325 روپے

ناشر: آکسفورڈ یونیورسٹی پریس

سن اشاعت: 2012

ISBN: 978-0-19-906288-1

علی اکبر ناطق موجودہ دور کے شاعر اور نثر نویس ہیں۔ آپ نے شاعری، افسانہ نویسی اور ناول نگاری کے شعبوں میں قلم آزمائی کی ہے۔ اپنے کام کی وجہ سے آپ ادبی دنیا کا ایک روشن ستارہ شمار کئے جاتے ہیں۔ ناطق بنیادی طور پہ ایک معمار ہیں تاہم آپ کا اردو اور عربی زبان کا مطالعہ بہت وسیع ہے۔ آپ کے لکھے افسانوں کی پہلی کتاب ہی آکسفورڈ یونیورسٹی پریس سے شائع ہوئی ہے۔ ایک بین الاقوامی ادارے سے آپ کی کتاب کا شائع ہونا بذات خود آپ کے کام کی اہمیت اور معیار کی نشاندہی ہے۔ کتابستان کا آج کا موضوع آپ کے افسانوں کی یہی کتاب ہے جس کا عنوان ہے “قائم دین”۔ اس کتاب کے علاوہ آپ کا لکھا ناول “نو لکھی کوٹھی” بھی پسندیدگی کی سند لینے میں کامیاب رہا ہے۔ Continue reading 137-قائم دین از علی اکبر ناطق

124-رقصِ جنوں (جزام) از بشریٰ سعید

رقصِ جنوں (جزام) از بشریٰ سعید

Raqs-e-junoon-by-bushra-saeedمصنفہ: بشریٰ سعید

صنف: ناول، پاکستانی ادب

صفحات: 182

ناشر: القریش پبلی کیشنز، لاہور

بشریٰ سعید صاحبہ کی تحاریر کی خاص بات ان کی منفرد اور گہری سوچ ہے۔ آپ معاملات کو ظاہری انداز سے نہیں دیکھتیں بلکہ ان کے اندر اتر کے ان کی اصلیت ڈھونڈ کے لاتی ہیں اور اس کے لئے چاہے پاتال میں ہی کیوں نہ جانا پڑے۔ یہی گہرا پن آپ کی تحریروں کو ان کا منفرد روپ دیتا ہے۔ آپ کے ناول ڈائجسٹ میں چھپنے کے باوجود معنویت کا پہلو لئے ہوتے ہیں۔ آپ کی سوچ کا انداز کہیں کہیں عمیرا احمد صاحبہ کی سوچ سے جا ٹکراتا ہے ایسا شاید مذہب کو موضوع بنانے کی وجہ سے محسوس ہوتا ہے۔

رقصِ جنوں، جاثیہ کی کہانی ہے۔ ناول کا آغاز ایک پجارن کے قصے سے ہوتا ہے جو اپنے دیوتا کو منانے کے لئے دیوانہ وار رقص کر رہی تھی۔ اسی رقص کی بنیاد پہ ناول کا عنوان رکھا گیا ہے۔ پجارن کے رقص کی وجہ سے دیوتا اپنے سنگھاسن سے اتر آیا، اور جب وہ نیچے اترا تو پجارن کو معلوم ہوا کہ وہ ایک عام انسان ہے اور انسانوں سے تو خوف کھاتے ہیں۔ ناول میں مصنفہ نے جاثیہ کی مماثلت اسی پجارن سے کی ہے۔ جاثیہ ایک بیوہ استانی کی بیٹی ہے۔ اس کی ماں نے اس کی تربیت نیک خطوط پہ کی تھی۔ لیکن جب اونیل، جاثیہ کے سامنے آٰیا تو وہ سب کچھ بھول گئی یہاں تک کہ یہ بھی کہ اس کے مذہب میں غیر مسلم مرد سے شادی کرنا ممنوع ہے۔ اونیل ایک یہودی شخص تھا جو پاکستان کے شہر اوکاڑہ میں ایک ہوٹل کی تعمیر کروا رہا تھا۔ اونیل کا خاندان جرمنی میں آباد تھا۔ اونیل نے جاثیہ سے کہا کہ وہ اس کی محبت پانے کی خاطر اپنا مذہب تبدیل کر لے گا۔ جاثیہ کی والدہ نے اپنی بیٹی کو اس بات کی اجازت نہیں دی اور نتیجتاً جاثیہ اپنا گھر چھوڑ کے بھاگ گئی۔ Continue reading 124-رقصِ جنوں (جزام) از بشریٰ سعید

107-The reluctant fundamentalist by Mohsin Hamid

The reluctant fundamentalist by Mohsin Hamid

ReluctantFundamentalistمصنف: محسن حامد

صنف: ناول، پاکستانی ادب

زبان: انگریزی

صفحات: ۲۰۰

سن اشاعت: ۲۰۰۷

محسن حامد پاکستانی ادیب ہیں جنہیں سن ۲۰۰۰ میں لکھے اپنے پہلے انگریزی ناول ’موتھ اسموک‘ کی وجہ سے بہت شہرت حاصل ہوئی۔ آپ کا دوسرا ناول ’دی ریلکٹنٹ فنڈامینٹلسٹ‘ جو آج کا ہمارا موضوع ہے ، نے بھی کامیابی کے نئے جھنڈے گاڑے۔ گزشتہ سال آپ کا تیسرا ناول بھی منظر عام پہ آیا ہے اور اس نے بھی بہت مقبولیت حاصل کی ہے۔آپ کے ناولوں کو بکر پرائز کے لئے شارٹ لسٹ بھی کیا گیا ہے۔ ٓپ کے ناولوں پہ فلمیں بھی بنائی جا رہی ہیں ۔ محسن حامد نے اپنی آدھی سے زیادہ زندگی پاکستان اور خصوصاً لاہور میں گزاری ہے۔ تاہم آپ کا بچپن امریکی شہر کیلی فورنیا میں گزرا ہے۔ آپ نے ہاورڈ اور پرسٹن یونیورسٹی سے تعلیم بھی حاصل کی ہے۔ کتابستان آج آپ کی کتاب کا تعارف و تبصرہ پیش کرتے ہوئے خوشی محسوس کر رہا ہے۔ Continue reading 107-The reluctant fundamentalist by Mohsin Hamid

100- سرخ فیتہ از قدرت اللہ شہاب

سرخ فیتہ از قدرت اللہ شہاب

Surkh Feetaمصنف: قدرت اللہ شہاب

صنف: افسانے، اردو ادب، پاکستانی ادب

صفحات: 239

کتابستان آج اپنے بلاگ پہ 100 ویں کتاب کا تعارف و تبصرہ پیش کرنے جا رہا ہے۔ یہ کتابستان کے سفر میں ایک سنگ میل ہے۔ اس سفر کے دوران ہماری کوشش رہی ہے کہ مختلف النوع کتب کے بارے میں بات کی جائے جو مذہب سے لے کے فکشن، بین الاقوامی ادب اور سائنس و ٹیکنالوجی کے میدانوں کی کتب کا جائزہ پیش کیا گیا ہے۔ آج کے اس موقع پہ ہم آپ کے لئے ایک خاص کتاب پیش کر رہے ہیں جس کا عنوان ہے سرخ فیتہ اور یہ قدرت اللہ شہاب صاحب کی لکھی ہوئی ہے۔ Continue reading 100- سرخ فیتہ از قدرت اللہ شہاب

096-بری عورت کی کتھا از کشور ناہید

بری عورت کی کتھا از کشور ناہید

BURI_AURAT_KI_KATHAنام مصنفہ: کشور ناہید

صنف: سوانح عمری، پاکستانی ادب

صفحات: 174

قیمت: 250 روپے

سن اشاعت: 2008

 ناشر: سنگ میل پبلی کیشنز لاہور

ISBN-10: 969-35-0628-6

ISBN-13: 978-969-35-0628-0

کشور ناہید صاحبہ کا ذکر گزشتہ صفحات پہ پہلے بھی ہو چکا ہے۔ آپ ایک معروف شاعرہ اور دانشور ہیں۔ آپ کی شاعری کے کئی مجموعے منظر عام پہ آ چکے ہیں۔ آپ کے انٹرویو اکثر اخبارات، اور جرائد کی زینت بنتے ہیں۔ آپ نے مختلف بین الاقوامی مضامین کے تراجم بھی کئے ہیں جو گاہے بہ گاہے سامنے آتے رہے ہیں۔ Continue reading 096-بری عورت کی کتھا از کشور ناہید

071- لاحاصل از عمیرا احمد

لاحاصل از عمیرا احمد

La hasil by Umera Ahmedمصنفہ:عمیرا احمد

صفحات: 275

کتابستان میں عمیرا احمد وہ مصنفہ ہیں جن کی کتب پہ سب سے زیادہ بات ہوئی ہے۔ آج پھر سے ہمارا موضوع ان کی لکھی ہوئی کتاب ہے۔ ایسا یقیناً ان کے کام کی اہمیت کی وجہ سے ہے۔ ان کے ناولوں نے جس طرح سے قارئین کے دلوں اور ذہنوں میں اپنی جگہ بنائی ہے وہ کم ہی دیکھنے میں آتی ہے۔ آپ کی تحریریں دیر پا اثرات چھوڑ جاتی ہیں اور مدتوں قارئین کے ذہن میں محفوظ رہتی ہیں۔ آپ کی تحاریر گرچہ عمومی ہیں لیکن ان کے کردار بہت خاص ہیں۔ آپ کے زیادہ تر کردار مشہور ہوئے ہیں جیسے سالار، امامہ، عکس، در شہوار وغیرہ۔ لاحاصل کی مرکزی کردار بھی ایک خاص خاتون ہیں جن کا نام ہے خدیجہ نور۔ Continue reading 071- لاحاصل از عمیرا احمد

070- بنیادی انحراف از پروفیسر احمد رفیق اختر

بنیادی انحراف از پروفیسر احمد رفیق اختر

Bunyadi inherafتالیف: سید انجم محمود گیلانی

صفحات: 272

قیمت: 450 روپے

ناشر: سنگ میل پبلی کیشنز، لاہور

پروفیسر صاحب کے تعارف میں ہم پہلے ہی بتا چکے ہیں کہ آپ کے مطابق اسلام کے ایک جھوٹے مذہب قرار پانے کے لئے صرف ایک غلطی نکال لینا ہی کافی ہے۔ آپ کے کہنے کے مطابق آپ کئی سالوں سے اس کوشش میں ہیں کہ آپ قرآن پاک میں سے صرف ایک غلطی پکڑ لیں تاہم کئی سالوں سے اس کوشش میں مبتلا ہونے کے باوجود آپ کو ناکامی حاصل ہوئی ہے۔ آپ نے جتنی اس کی کوشش کی ہے اتنا ہی آپ کا اور قرآن کا رشتہ مضبوط ہوا ہے۔ یہی پیغام آپ کی تمام تحریروں میں موجود ہے اور یہ پڑھنے والے میں مذہب کی نئی جوت جگانے کا کام کرتی ہیں۔ Continue reading 070- بنیادی انحراف از پروفیسر احمد رفیق اختر

069- بہشت از بشریٰ رحمٰن

بہشت از بشریٰ رحمٰن

Bahishtمصنفہ: بشریٰ رحمٰن

صفحات: 186

سن اشاعت: 2002

ناشر: خزینہ علم و ادب، لاہور

بشریٰ رحمٰن صاحبہ کا نام کسی تعارف کا محتاج نہیں۔ آپ ایک مشہور مصنفہ اور سیاستدان ہیں۔ کتابستان میں گفتگو آپ کے علمی کام تک ہی محدود رہے گی۔ آپ کے قلم سے کئی ناول، ناولٹ اور افسانے نکل چکے ہیں جنہوں نے بہت مقبولیت حاصل کی۔ ان میں پارسا، پیاسی، خوبصوورت، لازوال وغیرہ شامل ہیں۔ بشریٰ رحمٰن صاحبہ کا موضوع عورت ہے۔ آپ کی تحریروں میں عورتوں کی زندگی کے بارے میں بھرپور روشنی پڑتی ہے۔

آج جس کتاب پہ بات ہو رہی ہے اس کا عنوان ہے بہشت۔ یہ ناولٹوں کا مجموعہ ہے۔ اس میں کل پانچ ناولٹ شامل ہیں جن کے عنوانات ہیں: بہشت، بیگم صاحبہ، ممتا، امڑی اور بددعا۔ Continue reading 069- بہشت از بشریٰ رحمٰن

066- زاویہ (اول) از اشفاق احمد

زاویہ اول از اشفاق احمد

zaviaمصنف: اشفاق احمد

جس طرح بانو قدسیہ صاحبہ کے تعارف کے لئے یہ بتانا ضروری نہیں ہے کہ آپ اشفاق احمد صاحب کی شریک حیات ہیں، اسی طرح اشفاق احمد صاحب کے تعارف کے لئے بھی یہ بتانا ضروری نہیں کہ آپ بانو قدسیہ صاحبہ کے مجازی خدا ہیں۔ زاویہ اول، اشفاق احمد صاحب کے ٹیلی ویژن پروگرام زاویہ کے متن پہ مبنی کتاب ہے۔ اشفاق احمد صاحب کا یہ پروگرام پاکستان ٹیلی ویژن سے پیش کیا گیا اور اپنی منفرد پیشکش اور اشفاق احمد صاحب کی میزبانی کی وجہ سے بےحد مقبول ہوا، یہاں تک کہ اس کو کتابی شکل میں بھی پیش کیا گیا ہے۔ زاویہ نامی اس کتابی سلسلے کے تین حصے ہیں، زاویہ اول، زاویہ دوم اور زاویہ سوم۔ آج اس کے پہلے حصے یعنی زاویہ اول کے بارے میں بات ہو رہی ہے۔ Continue reading 066- زاویہ (اول) از اشفاق احمد

054- دل، دیا، دہلیز از رفعت سراج

دل، دیا، دہلیز از رفعت سراج

مصنفہ: رفعت سراج
صفحات: 1106

کتابستان پہ رفعت سراج صاحبہ کی یہ پہلی کتاب ہے جس پہ بات ہونے جا رہی ہے تاہم رفعت سراج کسی بھی طرح قارئین کے لئے نیا نام نہیں ہے۔ آپ خواتین ڈائجسٹوں کی باقاعدہ لکھاری ہیں اور کئی ناول آپ کے قلم سے نکل چکے ہیں جن میں سے کئی ایک نے بہت مقبولیت بھی حاصل کی ہے۔ آپ کے دیگر ناولوں میں دلِ آباد، شہر یاراں، امانت وغیرہ شامل ہیں۔

دل دیا دہلیز ایک ہزار سے زیادہ صفحات پہ محیط ایک ضخیم ناول ہے۔ اس بات سے قاری  اندازہ کر سکتا ہے کہ وہ ایک انتہائی تفصیلی انداز میں لکھا ہوا ناول پڑھنے جا رہا ہے۔ یہی اس ناول کی اچھی بات ہے کہ اس میں مصنفہ نے ہر کردار کا پس منظر اور اس کی کہانی کو تفصیلی واضح کیا ہے جس کی وجہ ناول میں اس کی سوچ اور نفسیات کو سمجھنے میں مدد ملتی ہے جو ایک طرف تو ناول کی خوبصورتی میں اضافہ کرتے ہیں وہیں کرداروں کی ضرورت کو بھی واضح کرتے ہیں۔ بہت سارے ناولوں میں ناول نگار صرف مرکزی کرداروں کی کہانی پیش کرتے ہیں اور دیگر کرداروں پہ توجہ نہیں دیتے جس کی وجہ سے وہ بھرتی کے معلوم ہونے لگتے ہیں، تاہم دل دیا دہلیز میں ایسا نہیں ہے۔ مصنفہ نے ہر کردار کو توجہ اور وقت دیا ہے اور اس سے بھر پور انصاف کیا ہے۔ Continue reading 054- دل، دیا، دہلیز از رفعت سراج

049- ماہنامہ گلوبل سائنس

ماہنامہ گلوبل سائنس

صفحات: 63
قیمت: 65 روپے

ماہنامہ گلوبل سائنس، کراچی سے شائع ہونے والا ایک سائنسی جریدہ ہے۔ پاکستان میں یہ واحد جریدہ ہے جو مکمل طور پہ سائنسی مضامین پہ مشتمل ہے اور اردو زبان میں شائع ہوتا ہے۔ ہمارے ہمسایہ ملک بھارت میں کچھ سائنسی جرائد ہیں جو اردو زبان میں شائع ہوتے ہیں تاہم وہ پاکستان میں دستیاب نہیں اور انٹر نیٹ پہ بھی موجود نہیں۔ ایسے میں اردو زبان میں ایک سائنسی قحط سا محسوس ہوتا ہے۔ ماہنامہ گلوبل سائنس اسی قحط کو دور کرنے کی ایک کوشش ہے۔ یہ رسالہ کئی سالوں سے ہر ماہ باقاعدگی سے شائع ہو رہا ہے۔ تاہم اس نے کئی گرم اور سرد دور دیکھے ہیں۔ پاکستان میں سائنسی جریدہ شائع کرکے اس سے مالی مفاد حاصل کرنا کسی دیوانے کے خواب سے کم نہیں۔ Continue reading 049- ماہنامہ گلوبل سائنس

048- ہم سفر از فرحت اشتیاق

ہم سفر از فرحت اشتیاق

مصنفہ: فرحت اشتیاق

جوں جوں میڈیا ترقی کر رہا ہے توں توں ناولوں پہ ڈرامے بننے کا رجحان فروغ پا رہا ہے۔ ہالی وڈ میں بھی مختلف ناولوں پہ فلمیں بنانے کا رجحان ہے اور ناولوں پہ کئی مشہور فلمیں بنائی جا چکی ہیں جیسے ہیری پوٹر سیریز، سائلنس آف دی لیمب، دی ڈا ونشی کوڈ وغیرہ۔ اسی طرح آج کل ایک چینل پہ دکھایا جانے والا مقبول عام ڈرامہ عشق ممنوع بھی ایک ناول کی ہی ڈرامائی تشکیل ہے۔ یہی رجحان پاکستان میں بننے والے ڈراموں میں بھی پایا جاتا ہے۔ آج کل بننے والے ڈراموں کی اکثریت خواتین ڈائجسٹوں میں چھپنے والے ناولوں پہ مبنی ہے۔ اور انہی ناولوں میں سے ایک ناول ہمسفر بھی ہے جس پہ بننے والے ڈرامے کو ملک گیر شہرت حاصل ہوئی ہے۔ اس ناول کی مصنفہ فرحت اشتیاق صاحبہ کے تعارف کے لئے یہ ہی کافی ہے کہ آپ ہم سفر کی مصنفہ ہیں۔ Continue reading 048- ہم سفر از فرحت اشتیاق

046- پیا رنگ کالا از بابا محمد یحییٰ خان

پیا رنگ کالا از بابا محمد یحییٰ خان

Piya Rang Kala By Baba yahya Khanمصنف: بابا محمد یحییٰ خان
صفحات: 722

بابا محمد یحییٰ خان موجودہ دور کے بابا ہیں۔ آپ ممتاز مفتی اور اشفاق احمد کے قبیل سے تعلق رکھتے ہیں اور ان کو اپنا مرشد مانتے ہیں۔ بابا جی کے بارے میں کئی لوگ جانتے ہوں گے۔ زیر گفتگو کتاب “پیا رنگ کالا” بظاہر بابا محمد یحییٰ خان کی آپ بیتی ہے۔ بظاہر کا لفظ یہاں اس لئے استعمال کیا ہے کہ اس کتاب میں بہت ساری ایسی ماورائی اور بعید از عقل باتیں موجود ہیں جن کی حقیقت کی سند دینا بہت مشکل ہے۔ ایسی باتوں کی موجودگی کی بنا پہ عقل پسند لوگ اس کتاب کو ناول کا درجہ دیتے ہیں اور اگر انہی کی بنیاد پہ کئی ماننے والے بابا جی کو “علم” والے بندے کا درجہ دے دیتے ہیں۔ تاہم حقیقت کیا ہے Continue reading 046- پیا رنگ کالا از بابا محمد یحییٰ خان

044- لبیک از ممتاز مفتی

لبیک از ممتاز مفتی

مصنف: ممتاز مفتی

ممتاز مفتی کا نام اردو ادب کے قارئین کے لئے نیا یا انجان نہیں ہے۔ آپ کے قلم سے کئی افسانے اور ناول نکل چکے ہیں۔ تاہم دو کتب ایسی ہیں جو آپ کی بھر پور مقبولیت کا سبب ہیں، علی پور کا ایلی اور الکھ نگری۔ اردو ادب کے ہر شائق نے ان دو کتابوں یا ان میں سے کسی ایک کتاب کا ضرور مطالعہ کیا ہو گا۔ کتابستان میں آج آپ کے قلم سے نکلی ہوئی ایک اور کتاب کا ذکر ہو رہا ہے جس کا عنوان ہے لبیک۔

لبیک، کوئی ناول یا افسانہ نہیں ہے۔ یہ آپ بیتی ہے، سفر نامہ ہے۔ یہ ممتاز مفتی صاحب کے حج کے سفر کی روداد ہے۔ یہ حج انہوں نے قدرت اللہ شہاب کے ساتھ ادا کیا تھا اور کتاب میں جگہ جگہ ان کے بارے میں معلومات موجود ہیں۔ ممتاز مفتی صاحب کا اپنے بارے میں یہ دعویٰ ہے کہ وہ کوئی مذہبی شخصیت نہیں ہیں۔ Continue reading 044- لبیک از ممتاز مفتی

041۔ سامانِ وجود از بانو قدسیہ

سامانِ وجود از بانو قدسیہ

مصنفہ: بانو قدسیہ
صفحات: 206

بانو قدسیہ صاحبہ کا نام کسی تعارف کا محتاج نہیں ہے۔ آپ کا کام ہی آپ کی پہچان ہے۔ مشہورِ زمانہ ناول “راجہ گدھ” کی آپ مصنفہ ہیں۔ آپ اپنے مخصوص فلسفے، سوچ انداز اور دھیمے پن کی وجہ سے دیگر تمام مصنفین سے ممتاز اور نمایاں نظر آتی ہیں۔ تاہم ایک المیہ یہ بھی ہے کہ آپ پاپولر فکشن پڑھنے والے قارئین میں زیادہ نہیں پڑھی جاتیں۔ عموماً لوگوں کو آپ کا انداز مشکل اور بوریت بھرا محسوس ہوتا ہے جس میں کہانی کم اور پیغام زیادہ ہوتا ہے۔ تاہم ہماری نظر میں یہی بانو جی کی خوبصورتی ہے۔ کہانیاں تو بہت پڑھنے کو مل جاتی ہیں لیکن کہانی کے ساتھ پیش کیا گیا پیغام ہی وہ چیز ہے جو کہانی کو خوبصورت اور یادگار بنا دیتی ہے۔ بانو صاحبہ کی تحاریر کی یہ خصوصیت ہے کہ Continue reading 041۔ سامانِ وجود از بانو قدسیہ

038۔ محبت خواب سفر از رخسانہ نگار عدن

محبت خواب سفر از رخسانہ نگار عدن

مصنفہ: رخسانہ نگار عدن
صفحات: 768

رخسانہ نگار عدن کا نام ڈائجسٹ پڑھنے والے قارئین کے لئے یقیناً نیا نہیں۔ آپ پاپولر فکشن لکھنے والی مصنفہ ہیں۔ کئی ناول اور افسانے آپ کے قلم سے نکل چکے ہیں اور  قارئین میں کافی پسند کئے گئے ہیں۔ آپ کی تحریروں میں محبت خواب سفر کے علاوہ پہلی سی محبت، میرے چارہ گر، پارس اور دیگر کئی ناول شامل ہیں۔ محبت خواب سفر، کتابی شکل میں شائع ہونے سے پہلے خواتین ڈائجٹس میں قسط وار شائع ہوتا رہا ہے۔ یہ ایک ضخیم اور طویل ناول ہے جس نے قسط وار مکمل ہونے میں پانچ سال کا عرصہ لیا۔ مصنفہ کے بقول یہ ناول خواتین ڈائجسٹ میں شائع ہونے والا اب تک کا طویل ترین ناول ہے جسے قارئین میں مقبولیت بھی حاصل ہوئی۔ Continue reading 038۔ محبت خواب سفر از رخسانہ نگار عدن

037۔ پیار کا پہلا شہر از مستنصر حسین تارڑ

پیار کا پہلا شہر از مستنصر حسین تارڑ

مصنف: مستنصر حسین تارڑ

صفحات: 270

پیار کا پہلا شہر، مشہور مصنف اور سفر نامہ نگار مستنصر حسین تارڑ کے قلم سے نکلی ہوئی ایک خوبصورت کہانی ہے۔ جیسا کہ نام سے ہی ظاہر ہے، “پیار کا پہلا شہر” ایک رومانوی یعنی محبت کی کہانی ہے۔ یہ سنان اور پاسکل کی کہانی ہے۔ سنان، ایک پاکستانی سیاح جو پیرس کی سیاحت کے لئے گھر سے نکلا ہے اور پاسکل، پیرس میں رہنے والی ایک خوبصورت لڑکی جو ایک حادثے کی وجہ سے معذور ہو گئی ہے اور اس معذوری کی وجہ سے خود ترسی اور اذیت پسندی کا شکار ہو چکی ہے۔

کہانی کا آغاز پیرس جانے والے ایک اسٹیمر پہ سنان اور پاسکل کی ملاقات سے ہوتا ہے۔ ملاقات کے دوران سنان پاسکل کی خوبصورتی سے متاثر ہوتا ہے تاہم وہ یہ نہیں جان پاتا کہ پاسکل کسی معذوری کا شکار ہے۔ پیرس پہنچنے پہ جب وہ اس حقیقت سے آگاہ ہوتا ہے تب بھی پاسکل کی معذوری اس کی پسندیدگی کم کرنے میں کامیاب نہیں ہوتی۔ دوسری طرف پاسکل، Continue reading 037۔ پیار کا پہلا شہر از مستنصر حسین تارڑ

036۔ اور لائن کٹ گئی از مولانا کوثر نیازی

اور لائن کٹ گئی از مولانا کوثر نیازی

14784_AZ7968مصنف: مولانا کوثر نیازی
صفحات: 171
قیمت: 250 روپے
ناشر: احمد پبلی کیشنز لاہور

گزشتہ مہینے پاکستان میں عام انتخابات منعقد ہوئے۔ یہ انتخابات اس لحاظ سے اہم تھے کہ ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی جمہوری حکومت نے اپنی مدت مکمل کی تھی اور اقتدار انتخابی عمل کے ذریعے سے نئی حکومت کو منتقل ہونے والا تھا۔ اس عمل کے دوران ملک کی تمام اہم سیاسی جماعتوں نے بھر طور طریقے سے حصہ لیا اور اسمبلیوں میں آنے کے لئے بھرپور کوشش کی۔ اس موقع پہ کتابستان ماضی کے اوراق سے نکال کے ایک کتاب لایا ہے جس میں پاکستان کے ایک سابق وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کی حکومت کے خاتمے، انتخابات اور جناب ضیا الحق کے لگائے گئے مارشل لاء سے پہلے کے حالات کو موضوع بنایا گیا ہے۔ اور لائن کٹ گئی، مولانا کوثر نیازی کی لکھی ہوئی کتاب ہے۔ آپ ذوالفقار بھٹو کے دور حکومت میں مذہبی امور کے وزیر تھے۔ اس لحاظ سے بھٹو صاحب سے آپ کی میل ملاقات بھی ہوتی رہتی تھی اور اس دور میں پیش آنے والے دیگر واقعات بھی آپ کی نظروں سے گزرتے رہے تھے۔ Continue reading 036۔ اور لائن کٹ گئی از مولانا کوثر نیازی

034۔ قدم بہ قدم از مسعود الحسن ضیاء

قدم بہ قدم از مسعود الحسن ضیاء

مصنف: مسعود الحسن ضیا

صفحات: 224

قیمت: 250 روپے

ناشر: پورب اکادمی، اسلام آباد

کتابستان کے آج کے بلاگ کا موضوع مسعود الحسن ضیاء کی لکھی ہوئی کتاب قدم بہ قدم ہے۔ مسعود الحسن ضیاء صاحب کی غالباً یہ پہلی کتاب ہے کیونکہ ان کی لکھی ہوئی کسی دوسری کتاب کا باوجود تلاش کے علم نہیں ہو سکا (اپ ڈیٹ: یہ کتاب مسعود الحسن صاحب کی پہلی تصنیف نہیں ہے۔ آپ کی پہلی تصنیف اور دیگر کتب کے بارے میں جاننے کے لئے اس بلاگ کے نیچے ان کا تبصرہ ملاحظہ کریں۔ شکریہ)۔ کتاب کے آغاز میں کئی لوگوں کی کتاب کے بارے میں رائے بھی پیش کی گئی ہے جن میں بانو قدسیہ صاحبہ، پروفیسر ڈاکٹر سلطان الطاف علی، فرحین چوہدری، پروفیسر ڈاکٹر سید شاہد حسن رضوی، اور ڈاکٹر مزمل بھٹی شامل ہیں۔ بانو قدسیہ صاحبہ کے خیالات پڑھ کے اندازہ ہوتا ہے کہ مسعود صاحب بھی اسی مکتب فکر سے تعلق رکھتے ہیں جس سے ممتاز مفتی صاحب رکھتے تھے Continue reading 034۔ قدم بہ قدم از مسعود الحسن ضیاء

032۔ شب گزیدہ از عنیزہ سید

شب گزیدہ از عنیزہ سید

مصنفہ: عنیزہ سید
صفحات: 232
ناشر: خواتین ڈائجسٹ، اردو بازار کراچی

عنیزہ سید کا نام ڈائجسٹ پڑھنے والے قارئین اور خصوصاً خواتین کے لئے نیا نہیں ہے۔ آپ کی تحریر کردہ کہانیاں، ناول اور افسانے کافی عرصے سے مختلف ڈائجسٹوں میں چھپتے رہے ہیں اور اب آپ کی تحریریں کتابی شکل میں بھی پیش کی جا رہی ہیں۔ عنیزہ ان خواتین قلم کاروں میں شامل ہیں جن کی تحریروں میں سنجیدگی اور مقصدیت موجود نظر آتی ہیں۔ آپ کی تحریریں کہانی برائے کہانی یا صرف ذہنی فینٹیسی حاصل کرنے کے لئے لکھی جانے والی کہانیوں میں نہیں آتیں۔ Continue reading 032۔ شب گزیدہ از عنیزہ سید

031۔ کشتِ زربار از پروفیسر احمد رفیق اختر

کشتِ زربار از پروفیسر احمد رفیق اختر

مصنف: پروفیسر احمد اختر رفیق
صفحات: 100

پروفیسر احمد اختر رفیق کا نام کئی لوگوں کے لئے نیا نہیں ہوگا۔ آپ موجودہ دور کے دانشور ہیں۔ دورِ جدید کے علوم کے ساتھ ساتھ آپ نے اللہ کی تلاش کا سفر بھی اختیار کیا۔ آپ کے مطابق قرآن کے الہامی کتاب ہونے کے دعوے کو غلط ثابت کرنے کے لئے اس میں سے محض ایک غلطی نکالنا ہی کافی ہے۔ لیکن آپ اپنی تمام تر کوشش کے باوجود اس میں سے ایک بھی غلطی نہیں نکال سکے۔ پروفیسر صاحب کے بقول اللہ کی تلاش کا سفر قرآن سے ہو کے گزرتا ہے اور یہ ہی وہ واحد الہامی کتاب ہے جو اللہ تک پہنچا سکتی ہے اس کے علاوہ دنیا کے کسی اور مذہب، تعلیمات اور کتاب میں یہ صلاحیت نہیں جو انسان کو اس کے خالقِ حقیقی تک لے جائے۔ پروفیسر صاحب کو کئی لوگ ایک ولی کا درجہ دیتے ہیں۔ Continue reading 031۔ کشتِ زربار از پروفیسر احمد رفیق اختر

029۔ کالا جادو از ایم۔ اے۔ راحت

کالا جادو از ایم۔ اے۔ راحت

مصنف: ایم۔ اے راحت
صفحات: 544
پبلشر: اخبار جہاں پبلیکیشنز، آئی آئی چندریگر روڈ، کراچی

ایم۔ اے راحت کا نام پاپولر فکشن پڑھنے والوں کے لئے نیا نہیں۔ آپ کے قلم سے کئی ناول نکل چکے ہیں، جن میں سے کئی ایک نے کافی مقبولیت بھی حاصل کی ہے۔ “کالا جادو” آپ کے لکھے ہوئے مقبول ترین ناولوں کی فہرست میں شامل ہے۔ یہ ناول ہفتہ وار اخبار جہاں میں قسط وار شائع ہوتا رہا ہے جس کو بعد میں کتابی شکل میں بھی پیش کیا گیا ہے۔ اس ناول کی مقبولیت کے باعث اس کے کئی ایڈیشن شائع ہو چکے ہیں۔

کالا جادو، جیسا کہ نام سے ظاہر ہے، کالے جادو کے متعلق لکھا گیا ہے۔ یہ ایک مسلمان لڑکے اور کالے جادو کے ماہر کے درمیان پیش آنے والے واقعات پہ مشتمل ہے۔ مختصراً اسے ایمان اور کفر کا معرکہ بھی کہہ سکتے ہیں۔

ناول کا مرکزی کردار ایک مسلمان لڑکا مسعود تھا، جو جوئے، سٹے جیسی لت میں مبتلا تھا۔ اس کی خواہش تھی کہ کسی طرح اس کا جوئے میں کوئی داؤ چل جائے اور وہ بنا محنت کئے ایک امیر آدمی بن جائے۔ اسی خواہش کے پیش نظر وہ ایسے جوگیوں اور سادھوؤں کی تلاش میں رہتا تھا جو اسے کوئی نمبر بتا سکیں Continue reading 029۔ کالا جادو از ایم۔ اے۔ راحت

028۔ تھوڑا سا آسمان از عمیرا احمد

تھوڑا سا آسمان از عمیرا احمد

مصنفہ: عمیرا احمد
صفحات: 829
قیمت: 700 روپے
ناشر: علم و عرفان پبلشرز

عموماً ڈائجسٹس میں چھپنے والی خواتین لکھاریوں کی لکھی ہوئی کہانیاں سنجیدہ قارئین کی توجہ نہیں لے پاتیں، تاہم عمیرا احمد اس لحاظ سے خوش قست مصنفہ ہیں کہ وہ سنجیدہ ادب پسند کرنے والوں میں بھی پڑھی جاتی ہیں۔ ایسا عمیرا کی خوش قسمتی کی وجہ سے نہیں ہے بلکہ ان کے کام کی وجہ سے ہے۔ ان کی تحاریر اتنی مضبوط ہوتی ہیں کہ وہ قاری کو اپنے سحر میں جکڑ لیتی ہیں اور کتاب پڑھے بنا کوئی چارہ نہیں رہتا۔ آج کا بلاگ، تھوڑا سا آسمان عمیرا احمد کے قلم سے نکلا ہوا ایک ضخیم ناول ہے جو آٹھ سو سے زائد صفحات پہ محیط ہے۔ مزید صفحات پہ لکھائی بہت چھوٹے سائز کی ہے اس لئے ایک صفحے پہ موجود مواد کی مقدار بھی کافی زیادہ ہے۔ یہاں اس بات کا ذکر کرنے کی ضرورت اس لئے پیش آئی تاکہ قارئین کو اندازہ ہو سکے کہ وہ ایک انتہائی تفصیلی انداز میں لکھا ہوا ناول پڑھنے والے ہیں، جسے لکھتے ہوئے کہانی کے مختلف پہلوؤں پہ بھر پور توجہ دی گئی ہے اور ناول ختم ہونے پہ کسی قسم کی تشنگی محسوس نہیں ہوتی۔ Continue reading 028۔ تھوڑا سا آسمان از عمیرا احمد

027۔ صلیب عشق از ہاشم ندیم

صلیب عشق از ہاشم ندیم

Saleeb-e-Ishq by Hashim Nadeemمصنف: ہاشم ندیم
صفحات: 95

ہاشم ندیم کا نام “خدا اور محبت” اور “عبداللہ” جیسے ناولوں کی مقبولیت کے بعد اجنبی نہیں رہا۔ آپ کے قلم سے نکلا ہوا ناول خدا اور محبت، آن لائن بک اسٹور ای مرکز کے بیسٹ سیلر کی فہرست میں بھی شامل ہے۔ ناول عبداللہ روزنامہ جنگ کے سنڈے میگزین میں قسط وار شائع ہوتا رہا اور اس نے مقبولیت اور پسندیدگی کے نئے ریکارڈ قائم کئے۔ ہاشم ندیم کے ہی قلم سے نکلی ہوئی ایک اور کتاب بچپن کا دسمبر بھی اپنے منفرد موضوع کی بنا پہ بہت پسند کی گئی۔

کتابستان کا آج کا موضوع ہاشم ندیم کے قلم سے نکلی ہوئی ہی ایک کتاب ہے جس کا عنوان ہے “صلیبِ عشق”۔ Continue reading 027۔ صلیب عشق از ہاشم ندیم