127- The history of the devil and the idea of evil by Paul Carus

The history of the devil and the idea of evil by Paul Carus

شیطان کی تاریخ: مختلف تہزیبوں اور مذاہب میں تصور شیطان کا تحقیقی جائزہ از پال کیرس اور یاسر جوادThe history of the devil

مصنف: پال کیرس

ترجمہ و تالیف: یاسر جواد

صنف: تحقیقی کتاب، فلسفہ، نان فکشن

صفحات: 208

قیمت: 300 روپے

سن اشاعت: 1900ء

اشاعت ترجمہ: ء 2014

ناشر: نگارشات پبلشرز

خدا کا تصور، ابتدائے آفرینش سے ہی انسان کے ہمراہ ہے۔ اس تصور کے ساتھ ہی اچھائی کی بنیاد وابستہ ہے۔ خیر اور شر کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔ شر کو شیطان کی پشت پناہی حاصل ہے۔ کتابستان کی آج کی منتخب کردہ کتاب اسی منفرد موضوع کے بارے میں ہے۔ اس کتاب میں شیطان کو موضوع بنایا گیا ہے۔ یہ کتاب پال کیرس نے سن 1900 میں تحریر کی تھی۔ کیرس ایک جرمن امریکی مصنف تھے جن کی مہارت فلسفے اور مذاہب عالم کے تقابلی مطالعے میں تھی۔ دنیا بھر کے مذاہب میں جہاں خدا کا تصور پیش کیا گیا ہے وہیں ایک شر کی قوت کا بیان بھی موجود ہے۔ کیرس نے اسی شر کی قوت کے بارے میں پیش کردہ معلومات، تصورات اور وضاحتوں کو علیحدہ کرکے ایک کتاب کی شکل دے دی ہے۔ کتاب کا ترجمہ یاسر جواد نے کیا ہے جنہوں نے ترجمے کے ساتھ ساتھ اس کتاب میں ایک باب کا اضافہ بھی کیا ہے۔ کتاب میں شیطان کے اسلامی تصور پہ مبنی باب یاسر صاحب کا تحریر کردہ ہے۔ اور آخری باب کارل ساگان کی کتاب “توہمات کی دنیا” کے اقتباسات کی مدد سےترتیب دیا گیا ہے۔ کتاب کا دیباچہ یاسر جواد صاحب کا تحریر کردہ ہے اور وہ رقم طراز ہیں؛

“پس ہماری یہی کوشش ہے کہ اس کتاب کے ذریعے صدیوں سے چلی آ رہی توہمات کا ایک غیر جانبدار تجزیہ پیش کیا جائے۔”

نیز

“اس کتاب میں ہمارا مقصد تصور شیطان کو غلط یا درست ثابت کرنے کی بجائے محض تاریخی اور تہزیبی تناظر میں اس کا تجزیہ پیش کرنا ہے اور ساتھ ساتھ یہ بھی بتانا کہ انسان نے مختلف ادوار میں اس تصور کی وجہ سے کیسے کیسے مصائب کا سامنا کیا۔ قارئین یہاں بیان کردہ حقائق کی روشنی میں اپنے اپنے توہمات اور عقائد کا تجزیہ کر سکتے ہیں۔ توقع ہے کہ انہیں شیطان کے بارے میں نئے انداز سے سوچنے اور اس سے وابستہ اپنے خوف کو دور کرنے میں مدد ملے گی۔”

کتاب میں کل سترہ باب ہیں، جن کے عنوانات ہیں؛

شیطان پرستی، قدیم مصر، عکاد اور ابتدائی سامی، فارسی ثنائیت، اسرائیل، برہمن مت اور ہندو مت، بدھ مت، نئے عہد کی ابتدا، ابتدائی عیسائیت، یونان و روم کا تصور نجات، شمالی یورپ کی شیطان پرستی، شیطان کا عروج، عدالت احتسان اور کافر، عہد اصلاح، خیر و شر کا فلسفیانہ مسئلہ، اسلام کا ابلیس جن، جدید شیطان ایلینز۔

عنوانات سے ظاہر ہوتا ہے کہ مصنف نے شیطان کے متعلق موجود تصورات کا تاریخی جائزہ لیا ہے۔ قدیم مصری اور یونانی تہازیب سے لے کے انیسویں صدی تک کے تصور شر پہ روشنی ڈالی ہے۔ کتاب میں جگہ جگہ ایسی تصویری پیشکشیں موجود ہیں جن میں مختلف تاریخی ادوار میں موجود تصور شیطان کو واضح کیا گیا ہے۔

کتاب سے ایک اقتباس ہے؛

“تصور شیطان کا ارتقاء مذہب کی تاریخ کا اہم باب ہے۔ انسان شیطان کا جو تصور اختیار کرتا ہے وہ اس کی ذہنی و اخلاقی حالت کا آئینہ دار ہوتا ہے۔ بائیبل کہتی ہے کہ انسان کو خداکی شبیہہ پر تخلیق کیا گیا لیکن ماہرین بشریات کے مطابق انسان دیوتاؤں کو اپنی شبیہہ پر تشکیل دیتے ہیں۔ اور یہ بات ہے کہ ہر شخص کا تصور خدا محض اس کے اپنے ذہن کی پیداوار اور اس کی اپنی ہی شخصیت کا عکاس ہے۔ اکثر کہا جاتا ہے کہ “تم مجھے اپنا تصور خدا بتاؤ اور میں بتا دوں گا کہ تم کون ہو۔

لیکن یہ خیال شیطان کے تصور پر بھی صآدق آتا ہے۔ اچھائی اور برائی کے تصورات کے درمیان مشابہت پائی جاتی ہے جو کہ محض ایک اتفاقی امر نہیں۔ آپ کا تصور شیطان اصل میں آپ کے تصور خدا کی تفسیر ہے”

کتاب میں جگہ جگہ قدیم دیوی دیوتاؤں کے قصے ملتے ہیں جن میں سے کئی نامانوس سے محسوس ہوتے ہیں۔ تاہم تاریخ اور قدیم مذاہب میں دلچسپی رکھنے والوں کے لئے یہ کتاب یقیناً دلچسپی کی حامل ہو گی۔

کیا آپ اس تبصرے سے متفق ہیں۔آپ بھی اس کتاب کے بارے میں اپنی رائے دیں۔

اگر آپ نے یہ کتاب پڑھی ہے تو اسے 1 سے 5 ستاروں کے درمیان ریٹ کریں۔

تشریف آوری کے لئے مشکور ہوں۔

اگلے ہفتے بریم اسٹوکر کی کتاب “دی جیول آف سیون اسٹارز * ” کا تعارف و تبصرہ ملاحظہ کیجئے۔ان شاء اللہ۔

*The Jewel of Seven Stars by Brem Stoker

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s