049- ماہنامہ گلوبل سائنس

ماہنامہ گلوبل سائنس

صفحات: 63
قیمت: 65 روپے

ماہنامہ گلوبل سائنس، کراچی سے شائع ہونے والا ایک سائنسی جریدہ ہے۔ پاکستان میں یہ واحد جریدہ ہے جو مکمل طور پہ سائنسی مضامین پہ مشتمل ہے اور اردو زبان میں شائع ہوتا ہے۔ ہمارے ہمسایہ ملک بھارت میں کچھ سائنسی جرائد ہیں جو اردو زبان میں شائع ہوتے ہیں تاہم وہ پاکستان میں دستیاب نہیں اور انٹر نیٹ پہ بھی موجود نہیں۔ ایسے میں اردو زبان میں ایک سائنسی قحط سا محسوس ہوتا ہے۔ ماہنامہ گلوبل سائنس اسی قحط کو دور کرنے کی ایک کوشش ہے۔ یہ رسالہ کئی سالوں سے ہر ماہ باقاعدگی سے شائع ہو رہا ہے۔ تاہم اس نے کئی گرم اور سرد دور دیکھے ہیں۔ پاکستان میں سائنسی جریدہ شائع کرکے اس سے مالی مفاد حاصل کرنا کسی دیوانے کے خواب سے کم نہیں۔ یہی وجہ ہے کہ رسالے کے مدیر چاہنے کے باوجود رسالے کی قیمت کم کرنے میں کامیاب نہیں۔ اس کے باوجود اس رسالے کی اہمیت کم نہیں ہوتی خصوصاً سائنس کے طالبعلموں کے لئے اپنی زبان میں معلومات حاصل کرنا بہت ہی مفید ہے۔

ماہنامہ گلوبل سائنس کل 63 صفحات پہ مشتمل ہوتا ہے۔ یہ رسالہ اخباری کاغذ پہ چھپتا ہے اور کور پیج کے علاوہ مکمل طور پہ بلیک اینڈ وائٹ ہے۔ جس کی وجہ سے رسالے کی پیش کش بہت دل آویز نہیں محسوس ہوتی۔ دنیا بھر میں سائنسی جرائد میں اب رنگین تصاویر شائع کرنے کا زمانہ ہے، یہ نا صرف دیکھنے میں عمدہ لگتی ہیں بلکہ سائنسی معلومات کو بھی بہتر انداز میں پیش کرتی ہیں۔ تصویروں کو بلیک اینڈ وائٹ انداز میں پیش کرنے سے ناصرف خوبصورتی متاثر ہوتی ہے بلکہ بہت ساری سائنسی معلومات بھی ضائع ہو جاتی ہیں۔ اس سے رسالے کی افادیت متاثر ہوتی ہے۔

رسالے میں کچھ مستقل عنوانات ہیں۔ جن میں سر فہرست اک نسخہ کیمیا ہے۔ اس سلسلے میں قرآن حکیم کی روشنی میں سائنس کا بیان پیش کیا جاتا ہے۔ اس میں قرآنی آیات کی سائنسی بنیادوں پہ تشریح کی جاتی ہے گویا مذہب اور سائنس کو ہم آہنگ کرنے کی کوشش ہے۔ اس کے علاوہ گلوبل سائنس بلیٹن میں متفرق سائنسی خبریں پیش کی جاتی ہیں۔ رسالے میں کمپیوٹر سائنس اور ٹیکنالوجی کے لئے ایک علیحدہ اور مکمل سیکشن ہے جس میں مختلف مضامین پیش کئے جاتے ہیں۔ ماہنامہ گلوبل سائنس کا ایک اور سیکشن گلوبل سائنس جونئر کے عنوان سے ہے جو بچوں کے لئے مخصوص ہے۔ اس میں بچوں کی معلومات کے لئے مختلف مضامین پیش کئے جاتے ہیں اور انعامی سلسلے بھی شامل ہیں۔

یہ رسالہ پاکستان میں سائنس و ٹیکنالوجی کے فروغ کے لئے بہت عمدہ کام کر رہا ہے۔ گرچہ ابھی اس سمت میں بہت کام ہونا باقی ہے لیکن پھر بھی اس رسالے کی موجودگی ایک امید کا احساس دلاتی ہے اور یہ باور کراتی ہے کہ ہم اس سلسلے میں غافل نہیں۔

کیا آپ اس تبصرے سے متفق ہیں۔اس کتاب کے بارے میں تبصرہ کریں ۔

اگر آپ نے یہ کتاب پڑھی ہے تو اسے 1 سے 5 ستاروں کے درمیان ریٹ کریں۔

تشریف آوری کے لئے مشکور ہوں۔

اگلے ہفتے مقبول جہانگیر کی کتاب “روسی جرنیل کی پراسرار موت” کا تعارف و تبصرہ ملاحظہ کیجئے۔ان شاء اللہ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s