031۔ کشتِ زربار از پروفیسر احمد رفیق اختر

کشتِ زربار از پروفیسر احمد رفیق اختر

مصنف: پروفیسر احمد اختر رفیق
صفحات: 100

پروفیسر احمد اختر رفیق کا نام کئی لوگوں کے لئے نیا نہیں ہوگا۔ آپ موجودہ دور کے دانشور ہیں۔ دورِ جدید کے علوم کے ساتھ ساتھ آپ نے اللہ کی تلاش کا سفر بھی اختیار کیا۔ آپ کے مطابق قرآن کے الہامی کتاب ہونے کے دعوے کو غلط ثابت کرنے کے لئے اس میں سے محض ایک غلطی نکالنا ہی کافی ہے۔ لیکن آپ اپنی تمام تر کوشش کے باوجود اس میں سے ایک بھی غلطی نہیں نکال سکے۔ پروفیسر صاحب کے بقول اللہ کی تلاش کا سفر قرآن سے ہو کے گزرتا ہے اور یہ ہی وہ واحد الہامی کتاب ہے جو اللہ تک پہنچا سکتی ہے اس کے علاوہ دنیا کے کسی اور مذہب، تعلیمات اور کتاب میں یہ صلاحیت نہیں جو انسان کو اس کے خالقِ حقیقی تک لے جائے۔ پروفیسر صاحب کو کئی لوگ ایک ولی کا درجہ دیتے ہیں۔ تاہم حقیقت کیا ہے یہ اللہ تعالیٰ سے بڑھ کے کوئی نہیں جانتا۔ جہاں پروفیسر رفیق کے کئی ماننے اور پسند کرنے والے ہیں وہیں ایسے لوگوں کی بھی کمی نہیں جو ان سے اختلاف رکھتے ہیں اور انہیں کسی سازش کا شاخسانہ قرار دیتے ہیں۔ تاہم یہ باتیں کتابستان کا موضوع نہیں ہیں۔ کتابستان میں گفتگو ان کی کتاب کے حوالے تک ہی محدود ہے۔ پروفیسر احمد اختر رفیق کی کئی کتب منظر عام پہ آ چکی ہیں۔ تاہم یہ کتب انہوں نے باضابطہ طور پہ تحریر نہیں کی ہیں بلکہ یہ ان کے مختلف لیکچرز پہ مشتمل ہیں جو وہ وقتاً فوقتاً دیتے رہتے ہیں اور آپ کے پسند کرنے والے آپ کی باتوں کو کتابی شکل میں شائع کروا کے انہیں مزید لوگوں تک پہنچانے کے لئے کوشاں ہیں۔ آپ کی ویب سائٹ بھی موجود ہے جہاں سے کئی کتب بآسانی ڈاؤن لوڈ کی جا سکتی ہیں۔

کتابستان کے آج کے بلاگ کا موضوع آپ کی کتاب “کشتِ زربار” ہے۔ جس میں آپ کے چھ خطبات یعنی لیکچرز شامل ہیں۔ جن کے عنوانات ہیں: ترجیح اولیٰ، علم اور اللہ، خدا اور کائنات، حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم، نطریہ جمال پروردگار، اور اسلام اور عصر حاضر۔

ترجیح اولیٰ میں پروفیسر صاحب کا نقطہ نظر یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ کو ہی ہر انسان کی اولین ترجیح ہونا چاہئے۔ جب تک انسان اللہ کو اپنی پہلی ترجیح نہیں بنائے گا تب تک وہ اللہ تک پہنچنے کی کوشش میں کامیاب نہیں ہو سکے گا۔ انسان ایک قدم اللہ کی طرف بڑھائے گا اور اللہ دو قدم دوڑ کے اس کی طرف آئے گا۔ لیکن ایسا تب ہی ہوگا جب پہلی ترجیح اللہ ہوگا۔ اس کے ساتھ ہی آپ نے خدا شناسی کے ساتھ ساتھ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی عظمت اور اہمیت کو الگ باب میں پیش کیا ہے کیونکہ آپ ہی وہ ہستی ہیں جو وجہ تخلیق کائنات ہیں۔

“خدا اور کائنات” کے باب میں تسخیر کائنات کے حوالے سے جدید سائنس کی تحقیقات کا قرآنی تعلیمات  کی روشنی میں تجزیہ کیا گیا ہے۔ جو فکری تازگی اور ذہنی کشادگی پروفیسر صاحب کے لیکچر میں ملتی ہے وہ کسی متلاشی ذہن کے لئے آکسیجن کا کام دیتی ہے۔

“اسلام اور عصر حاضر” میں اسلام کے امتداد زمانہ کے اثرات سے ماورا ہونے اور ہر دور میں مکمل دین ہونے کو بیان کیا گیا ہے۔

یہ تمام خطبات پروفیسر صاحب کے اپنے ذاتی علم معلومات کی وسعت کا آئینہ دار ہیں۔ ان میں جہاں انہوں نے تاریخ اسلام سے واقعات اٹھا کے دلائل دئے ہیں اور اپنے نقطہ نظر کے لئے وضاحتیں پیش کی ہیں وہیں سائنسی ترقی کے بارے میں بھی آپ کی معلومات اپ ٹو ڈیٹ ہیں اور موقع کی مناسبت سے استعمال کی گئی ہیں جو جہاں پروفیسر صاحب کی بات اور پیغام کو وزن دار بنا دیتی ہیں وہیں پڑھنے والے کی ذہنی کشادگی کا بھی سبب بنتی ہیں۔

حق اور سچ کی تلاش کے مسافروں کو اس کتاب کا مطالعہ بھی ضرور کرنا چاہئے۔ تاہم پروفیسر صاحب سے عقیدت اختیار کرنا یا نہ کرنا ان کے اپنے اوپر منحصر ہے۔

کیا آپ اس تبصرے سے متفق ہیں۔اس کتاب کے بارے میں تبصرہ کریں ۔

اگر آپ نے یہ کتاب پڑھی ہے تو اسے 1 سے 5 ستاروں کے درمیان ریٹ کریں۔

تشریف آوری کے لئے مشکور ہوں۔

اگلے ہفتے عنیزہ سید کے ناول “شب گزیدہ” کا تعارف و تبصرہ ملاحظہ کیجئے۔ان شاء اللہ۔

Advertisements

7 thoughts on “031۔ کشتِ زربار از پروفیسر احمد رفیق اختر”

  1. یہ کتاب 2002 میں پہلی بار شائع ہوئی اور میں نے اسے 2003 میں پڑھا ، قرآن پاک کی قربت اس سے پہلے مجھے کسی اور کتاب یا تفسیر پڑھ کر نصیب نہیں ہوئی تھی بے شک قرآن پاک ہدایت ہے رہنمائی ہے لیکن آیات ِ قرانی کی مٹھاس اور لذت کا احساس “کشت ِ زربار ” پڑھ کر ہوا -اللہ تعالٰٰی پروفیسر صاحب کو اس کی جزا دے آمین –

    Like

  2. Ye kitab main ne 2004 main parhi hai aur ab 100 se zaid bar parh chuka hoon is k parhne pehly mera zehan bilkul khali tha magar ab mera nazaria Allah, Rasool aur islam aur zindagi ke barey main nazeria bhohat wazae ho chuka hai. Allah talla professor sahab jazae khair ata kare

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s