023۔ تائیس (Thais) از اناطول فرانس (Anatole France)

تائیس (Thais) از اناطول فرانس (Anatole France)

مترجم: عنایت اللہ دہلوی
صفحات: 208
قیمت: 200 روپے
پبلشر: فکشن ہاؤس، بک اسٹریٹ 39-مزنگ روڈ لاہور، پاکستان

اناطول فرانس، ایک مشہور فرانسیسی ادیب تھے۔ ادیب ہونے کے ساتھ ساتھ آپ شاعر اور صحافی بھی تھے۔ آپ کے لکھے ہوئے ناول تائیس (1890) کو نوبل انعام دیا گیا۔ آج کے بلاگ کا موضوع یہی ناول ہے۔ یہ نوبل انعام یافتہ ناول اب اردو پڑھنے والے قارئین کے لئے بھی دستیاب ہے۔

اس ناول کا مرکزی کردار ایک عیسائی راہب پفنوتوس ہے جو دریائے نیل کے کنارے صحرا میں ایک جھونپڑی میں رہائش پذیر تھا۔ دریائے نیل کا یہ کنارا عیسائی راہبوں سے آباد تھا۔ پفنوتوس انہی عیسائی راہبوں میں سے ایک تھا اوردل ہی دل میں اپنی عبادت پہ بہت مغرور تھا۔ ناول کا دوسرا اہم کردار اور جس کے نام پہ اس ناول کا نام بھی رکھا گیا ہے وہ تائیس کا کردار ہے۔ تائیس الیگزینڈریا میں رہنے والی ایک بےحد خوبصورت خاتون تھی۔جو ایک انتہائی عمدہ رقاصہ، گلوکارہ اور اداکارہ تھی۔ اپنے حسن اور فن کی وجہ سے اس نے بہت دولت کمائی تھی اور پرتعیش زندگی گزار رہی تھی۔

ناول کی کہانی کا آغاز اس وقت ہوتا ہے جب ایک دن عبادت کے دوران پفنوتوس کو خیال آتا ہے کہ اس نے الیگزینڈریا میں ایک دن تائیس کا تماشہ دیکھا تھا۔ اس تماشے کے دوران تائیس ایسی حرکات میں مشغول تھی جو  بےشرمی کے دائرے میں آتی تھیں۔ ابتدا میں وہ تائیس کے خیال کو اپنا گناہ تصور کرتا ہے لیکن جلد ہی اسے تائیس کے لئے افسوس ہوتا ہے جو گناہوں کی دلدل میں گھری ہوئی ہے۔ اسے محسوس ہوتا ہے کہ جوں جوں تائیس کے گناہوں میں اضافہ ہو رہا ہے ویسے ویسے اس کے لئے پفنوتوس کے افسوس میں بھی اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ وہ تائیس کو گناہوں کی دلدل سے نکالنے کے لئے الیگزینڈریا کے سفر کا ارادہ کرتا ہے۔ سفر پہ جانے سے پہلے وہ ایک اور صحرائی راہب کے پاس مشورہ کے لئے جاتا ہے جو نیکی اور عبادت میں بہت بزرگ تھا۔ وہ اسے مشورہ دیتا ہے کہ راہب کے لئے دنیا میں واپس جانا بہت خطرناک ہے اور اس سے کوئی فائدہ حاصل نہیں ہوتا۔

پفنوتوس سفر پہ روانہ ہوتا ہے جہاں اسے مختلف لوگوں سے ملنے کا موقع ملتا ہے۔ ان لوگوں سے گفتگو کے دوران قاری پہ پفنوتوس کا کردار آہستہ آہستہ کھلنا شروع ہوتا ہے لیکن دلچسپ بات یہ ہے کہ پفنوتوس خود اپنے کردار کے اصل رخ سے ناواقف ہی رہتا ہے۔ وہ خود کو ایک اعلیٰ درجے کا راہب اور نیک بزرگ ہی خیال کرتا ہے اور دوسروں کو اپنے مقابلے میں حقارت کی نظر سے دیکھتا ہے۔ الیگزینڈریا پہنچ کے پفنوتوس، تائیس کو تائیب کروانے میں کامیاب ہو جاتا ہے اور اسے اپنے گناہوں کا کفارہ ادا کرنے کے لئے راہبات کے ایک گھر میں چھوڑ کے واپس اپنے صحرا چلا جاتا ہے۔ تاہم یہ کہانی کا اختتام نہیں ہے۔ آیا تائیس اپنے گناہوں کی معافی حاصل کرنے میں کامیاب رہی؟ اور کیا تائیس کو تائیب کروانے کی نیکی سے پفنوتوس کی بزرگی کے درجات میں اضافہ ہوا؟ اس کے بارے میں جاننے کے لئے تو ناول پڑھنا پڑے گا۔

ناول کا نام گرچہ تائیس کے نام پہ رکھا گیا ہے تاہم پفتوتوس کہانی کا مرکزی کردار ہے اور وہی ہے جس کے گرد یہ ناول گھومتا ہے۔ پفنوتوس کے نزدیک وہ ایک بڑا مذہبی راہب تھا، لیکن افسوس کی بات یہ تھی کہ وہ اپنے علاوہ اور بہت سے نیک بزرگوں بشمول تائیس سے ملتا ہے مگر انہیں پہچان نہیں پاتا اور اپنے غرور کی وجہ سے ان کے ساتھ حقارت کا برتاؤ کرتا ہے۔اس کے نزدیک دنیا میں گناہ گار لوگ بہت زیادہ ہیں اور انہیں مدد کی ضرورت ہے لیکن کہانی کے اختتام پہ معلوم ہوتا ہے کہ اصل مدد کی ضرورت تو خود پفنوتوس کو تھی۔ وہ تمام وقت خود کو خدا کی محبت کا دعوے دار قرار دیتا ہے۔ تائیس کو تائیب کروانے کے فعل کا باعث بھی وہ خدا سے محبت کو قرار دیتا ہے تاہم اختتام پہ اسے معلوم ہوتا ہے کہ وہ دراصل خدا کی نہیں بلکہ تائیس کی محبت تھی جس میں وہ گرفتار تھا۔

کہانی کے اختتام پہ پفنوتوس کے لئے افسوس محسوس ہوتا ہے۔ اس کی ایک وجہ یہ بھی ہو سکتی ہے کہ اپنے سفر کے دوران اسے کبھی مناسب رہنمائی اور مشورہ نہیں ملا گرچہ اس نے کوئی قدم اٹھانے سے پہلے بزرگ راہبوں سے مشورہ بھی کیا۔ اناطول فرانس کا یہ ناول طنزیہ انداز لئے ہوئے ہے۔ بظاہر یہ تائیس اور پفنوتوس کی کہانی ہے لیکن اس ناول کے دوران پفنوتوس نے مختلف مکتب فکر کے لوگوں کے فلسفوں کو بھی عمدگی کے ساتھ پیش کیا ہے۔ بہت سے لوگ اسے سینٹ تائیس کی کہانی قرار دیتے ہیں۔ اناطول فرانس نے قدیم زمانے کی بہت عمدہ منظر کشی کی ہے اور ایسا محسوس ہوتا ہے کہ یہ ناول انیسویں صدی کی بجائے چوتھی صدی عیسوی میں ہی لکھا گیا ہے۔

اس کتاب کے بارے میں تبصرہ کریں ۔

اگر آپ نے یہ کتاب پڑھی ہے تو اسے 1 سے 5 ستاروں کے درمیان ریٹ کریں۔

تشریف آوری کے لئے مشکور ہوں۔

اگلے ہفتے Dan Brown کی کتاب “Angels and demons” کا تعارف و تبصرہ ملاحظہ کیجئے۔ان شاء اللہ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s